All In One وطن کا سپاہی - Printable Version

+- puttyupdate.ru (http://puttyupdate.ru)
+-- Forum: XXX STORIES (http://puttyupdate.ru/forum-88.html)
+--- Forum: Urdu Sex Stories (http://puttyupdate.ru/forum-65.html)
+--- Thread: All In One وطن کا سپاہی (/thread-20861.html)

Pages: 1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12 13 14 15 16 17 18 19 20 21 22 23 24 25 26 27 28 29 30 31 32 33 34 35 36 37 38 39 40 41 42 43 44 45 46 47


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

کچھ ہی دیر میں سنجے شرما کچن سے کچھ فروٹ کاٹ کر اور کچھ فروٹس کا تازہ جوس بنا کر لے آیا۔ ایک گھنٹے کی دیوانہ وار چدائی کے بعد دونوں کو ہی انرجی کی ضرورت تھی جو اس فروٹ کے فریش جوس سے پوری ہوگئی تھی۔ دیپیکا کے بدن پر اب ایک کالے رنگ کی ساڑھی تھی جسکا بلاوز دیپیکا کی عادت کے برخلاف کچھ بڑا تھا اور اسکی ناف تک آرہا تھا۔ جبکہ ناف نظر آرہی تھی اور ساڑھی نیچے کولہوں کے برابر سے شروع ہورہی تھی ،دیپیکا نے اپنے آُ کو پاکیشائی روایت کے مطابق لباس زیب تن کرنے کی کوشش کی تھی مگر اسے نہیں معلوم تھا کہ پاکیشا کے کلچر میں بھی یہ ساڑھی کافی سیکسی اور بولڈ تصور کی جاتی ہے۔ پھر دونوں تیار ہونے کے بعد دیپیکا کی گاڑی میں ائیر پورٹ کی طرف روانہ ہوگئے، جہاں سے ایک نا معلوم شخص دیپیکا کی گاڑی لیکر دوبارہ دیپیکا کے گھر چھوڑنے چلا گیا یہ کیپٹن سنجے شرما کا آدمی تھا ڈرائیور کو بھی ٹھکانے لگانے کی وجہ سے سنجے شرما نے اس شخص کو بلا رکھا تھا اور وہ خود دیپیکا کے ملازم کے حلیے میں اسکا سامان اٹھائے اسکے پیچھے پیچھے جا رہا تھا


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

ائیر پورٹ پر دیپیکا پڈوکون کو فل پروٹوکول مل رہا تھا کیونکہ کرنل وشال بھی پاکیشا روانگی سے قبل دیپیکا پڈوکون کے سپیشل مشن کے بارے میں ائیرپورٹ انتظامیہ کو بتا چکا تھا، اور اس چیز کا فائدہ کیپٹن سنجے کو بھی ہوا کہ اسکی خاص چیکنگ نہیں ہوئی محض پاسپورٹ چیک کیا گیا جو کہ اصلی تھا۔ مگر مرلی کے نام پر تھا جسکا حلیہ اس وقت سنجے شرما نے اپنا رکھا تھا۔ کچھ ہی دیر کے بعد یہ چھوٹی فلائیٹ ٹیک آف کرنے کے لیے تیار ہوچکی تھی جس میں چند سواریاں تھیں اور ائیرپورٹ سے ہی کچھ فلم انڈسٹری کی غیر معروف شخصیات دیپیکا کے ساتھ ہولیں جنکا دیپیکا کی اس ریلیز کی جانے والی فلم سے کسی نا کسی حد تک تعلق تھا مگر انکے نزدیک سنجے شرما کی کوئی حیثیت نہیں تھی وہ تو محض دیپیکا کا ملازم تھا اس لیے فرسٹ کلاس سیکشن میں ہونے کے باوجود اسکو بالکل آخری سیٹ پر بٹھایا گیا تھا جبکہ باقی لوگ کچھ آگے تھے اور دیپیکا کے قریب تھے


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

رات 8 بجے تک ماریہ بے چینی سے لوکاٹی کا انتظار کرتی رہی ، 8 بجے کے قریب ایک خاتون نے کمرے میں آکر ماریہ کو بتایا کہ لوکاٹی صاحب کچھ ہی دیر میں آپکے کمرے میں تشریف لائیں گے انہوں نے آپکو تیار کرنے کا حکم دیا ہے۔ ماریہ نے اسے کہا تم جاو میں خود ہی تیار ہوجاوں گی۔ یہ سنکر وہ عورت الٹے قدموں واپس چلی گئی اور ماریہ لوکاٹی کے لیے تیار ہونے لگی۔ ماریہ کو تیار ہونے میں زیادہ دیر نہیں لگی۔ مگر اسکو لوکاٹی کے لیے تھوڑا انتظارکرنا پڑا جو اسکے لیے کافی تکلیف دہ تھا۔ وجہ یہ نہیں تھی کہ وہ لوکاٹی کے لن کے لیے بے چین ہورہی تھی بلکہ وجہ تھی لوکاٹی کے خلاف بنائے گئے پلان کو عملی جامہ پہنانے کی جسکی ماریہ کو خاصی جلدی تھی۔ اور ویسے بھی اس نے آج سارے د ن میں حویلی نما محل کی ایک ایک جگہ چھان ماری تھی اور اسے یہ بھی معلوم تھا کہ یہاں رات کو جلدی سونے کے عادی ہیں لوگ حویلی رات کے 9 بجے ہی سنسان ہوجاتی ہے تمام ملازم اور حویلی کے مکین اپنے اپنے کمرے میں جا کر خوابِ خرگوش کے مزے لوٹتے ہیں، رات کی ڈیوٹی والے ملازموں کے لے ایک مخصوص کمرہ تھا کہ اگر رات میں کسی کو ضرورت ہو تو وہ اسی کمرے سے ملازم کو انٹر کام کے ذریعے بلا سکتے تھے۔ ایسے میں رات کے 9 بجے تک لوکاٹی کا انتظار کرنا کافی مشکل ہورہا تھا ماریہ کے لیے۔ 


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

اچانک کمرے کا دروازہ کھلا تو ماریہ سمجھ گئی کہ اب کی بار لوکاٹی کمرے میں آیا ہے ، وہ سمٹ کر بیٹھ گئی تھی۔ لوکاٹی کمرے میں آیا تو ایک لمحے کے لیے تو اسکی آںکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں۔ کمرے میں تمام لائٹس آف تھیں مگر بیڈ کے چاروں طرف موم بتیاں روشن تھیں جس کی ہلکی ہلکی روشنی میں اندر کا ماحول خاصا رومانٹک اور عاشقانہ ہورہا تھا اور بیڈ کے چاروں طرف گلاب کی پتیاں موم بتی کی ہلکی روشنی میں بہت خوبصورت منظر پیش کر رہی تھیں۔ بیڈ پر بھی گلاب کی پتیاں بکھری ہوئی تھیں اور انکے بیچ میں سرخ رنگ کی چادر میں لپٹی تانیہ لوکاٹی کا انتظار کر رہی تھی۔ گھونگٹ نکالے ہوئے ماریہ خاصی بے چینی سے لوکاٹی کا انتظار کر رہی تھی اور اب یہ انتظار ختم ہو چکا تھا۔ لوکاٹی نے ماریہ کو سرخ چادر میں لپٹا دیکھا تو ایک لمحے کے لیے اسے یوں لگا کہ ایک نئی نویلی دلہن اسکے انتظار میں سرخ رنگ کا عروسی جوڑا پہنے اسکے انتظار میں بیٹھی ہے۔ کمرے کا رومانٹک ماحول اور سامنے بیڈ پر دلہنوں کی طرح بیٹھی ماریہ کو دیکھ کر لوکاٹی کے دل میں لڈو پھوٹنے لگے تھے اور اسکی شلوار میں لن نے سر اٹھانا شروع کر دیا تھا۔ اسکو ایک بار تو وہی تانیہ یاد آگئی تھی جسکو خوبصورت نائٹی میں گوا کے ہوٹل میں لوکاٹی نے خوب جم کر چودا تھا۔ 


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

لوکاٹی آہستہ آہستہ آگے بڑھتا ہوا ماریہ تک گیا اور اسکے پاس جا کر بیٹھ گیا اور اسے دیکھنے لگا۔ لمبی چادر سے ماریہ کے صرف خوبصورت ہاتھ ہی نظر آرہے تھے جن پر مہندی کا خوبصورت ڈیزائن بنا ہوا تھا۔ یہ مہندی بھی ماریہ نے ایک ملازمہ سے کہ کر شام میں ہی لگوا لی تھی جسکا ایک ہی گھنٹے میں کافی اچھا رنگ چڑھ گیا تھا، اور ہاتھوں سے نیچے ماریہ کے خوبصورت چمکتے ہوئے پاوں دکھ رہے تھے، اسکے علاوہ باقی صرف اور صرف سرخ کرنگ کی چادر تھی۔ لوکاٹی نے آگے بڑھ کر ماریہ کے قریب ہوکر ہولے سے کہا اگر اجازت ہو تو کیا میں آپکا گھونگٹ اٹھا سکتا ہوں۔ ماریہ نے آہستہ سے ہاں میں سر ہلایا، تو لوکاٹی نے ماریہ کے چہرے کے آگے سے ہلکی سی چادر ہٹا کر اسکے سر پر رکھ دی۔ اسکی نظر ماریہ کے چہرے پر پڑی تو وہ اور بھی خوش ہوا ، ماریہ کے خوبصورت گلابی اور رسیلے ہونٹوں پر اس وقت سرخ رنگ کی لپ اسٹک لگی ہوئی تھی جو لوکاٹی کو بہت پسند تھی۔ اور اسکا ہلکا مگر بہت مہارت سے کیا گیا میک اپ اسکی خوبصورتی کو چار چاند لگا رہا تھا اب تو لوکاٹی اپنے آپے سے باہر ہوا جا رہا تھا اسکا بس نہیں چل رہا تھا کہ وہ فوری سے پہلے ماریہ کو اسکےسارے کپڑوں سے آزاد کر دے اور اسکی خوبصورت اور ٹائٹ پھدی میں اپنا لن گھسا کر دے گھسے پر گھسا مارے۔ مگر اس نے ماریہ سے وعدہ کر رکھا تھا کہ آج کی رات جیسے ماریہ کہے گی ویسے ہی لوکاٹی اسکے بدن سے پیار کرے گا۔ 


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

ماریہ کا خوبصورت چہرہ دیکھ کر لوکاٹی نے اسے پیار بھری آواز میں کہا ، مانگو میری مہارانی آج کیا مانگتی ہو۔ آج تم جو مانگو گی لوکاٹی وہ تمہیں دے گا تمہاری اس خوبصورت آنکھوں اور شربتی ہونٹوں کی قسم۔ ماریہ نے شرماتے ہوئے لوکاٹی کی طرف دیکھا، اور ہولے سے بولی، آپ نے اس چیز کو اپنی مہارانی بنا لیا اور اسکے بعد بھلا میں کس چیز کی تمنا کر سکتی ہوں، اب تو بس ایک ہی تمنا ہے کہ جن ہونٹوں کی آپ نے قسم کھائی ہے، ان ہونٹوں کی پیاس اپنے ہونٹوں سے بجھا دیجیے۔ یہ سنتے ہی لوکاٹی کی آنکھوں میں چمک آگئی وہ تو پہلے ہی یہ چاہتا تھا اب ماریہ کی طرف سے فرمائش کے بعد تو لوکاٹی ایک لمحہ ضائع کیے بغیر ان شربتی ہونٹوں سے سارا شربت پی جانا چاہتا تھا۔ وہ ایک دم سے ماریہ کے ہونٹوں کو چوسنے کے لیے آگے بڑھا مگر ماریہ نے ہاتھ کہ اشارے سے روک دیا اور بولی نہیں ایسے نہیں۔ لوکاٹی بے چینی سے بولا تو پھر کیسے میری جانِ من؟؟؟ ماریہ مسکرائی اور بولی پہلے اپنی آنکھیں بند کریں۔ اور اپنے ہاتھ اپنے سر کے پیچھے باند ھ لیں۔ اور جب تک میں نہ کہوں آپ نہ تو اپنی آنکھیں کھولیں گے اور نہ اپنے ہاتھوں سے میرے جسم کے کسی بھی حصے کو چھونے کی کوشش کریں گے


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

لوکاٹی نے فورا ہی اپنی آنکھیں بند کر لیں اور اپنے ہاتھ اپنے سر کے پیچھے باندھ لیے۔ جیسے ہی اس نے اپنی آنکھیں بند کی اسے بیڈ پر ہلچل محسوس ہوئی اور پھر کچھ ہی سیکنڈز کے وقفے کے ساتھ اسکو 440 وولٹ کا جھٹکا لگا جب اسے اپنے ہونٹوں پر ماریہ کے خوبصورت ہونٹوں کا لمس محسوس ہوا اور اپنے چہرے پر ماریہ کے ہاتھوں کی نرم نرم گرفت محسوس ہوئی۔ لوکاٹی نے فورا ہی ماریہ کے ہونٹوں کو چوسنا شروع کر دیا تھا مگر ماریہ کے کہنے کےمطابق نہ تو اس نے اپنی آنکھیں کھولیں اور نہ ہی اس نے اپنے ہاتھ ماری کے جسم کی طرف بڑھائے۔ البتہ ماریہ کے نازک ہاتھ اب لوکاٹی کے گردن پر ہولے ہولے مساج کر رہے تھے اور مسلسل لوکاٹی کے ہوںٹوں کو ماریہ کے ہونٹ چوسنے میں مصروف تھے۔ پھر لوکاٹی کو اس وقت اور بھی مزہ آنے لگا جب ماریہ نے اپنی زبان منہ سے نکال کر لوکاٹی کے ہونٹوں پر رکھ کر دباو ڈالنا شروع کیا۔ لوکاٹی سمجھ گیا تھا کہ اسکی مہارانی اپنی زبان اسکے منہ میں داخل کرنا چاہتی تھی اس نے فوران ہی اپنا منہ ہلکا سا کھول کر ماریہ کی زبان کو اندر جانے کا راستہ دیا اور جیسے ہی ماریہ کی زبان لوکاٹی کے منہ میں گئی اس نے فورا ہی ماریہ کی زبان کو منہ مین لیکر چوسنا شروع کر دیا۔ کچھ دیر تک ماریہ اسی طرح لوکاٹی کی گردن پر ہاتھ پھیرتی رہی اور اپنی زبان اسکے منہ میں ڈالکر پیار کرتی رہی۔ پھر ماریہ نے لوکاٹی کے دونوں ہاتھوں کو کھول کر اپنے ہاتھوں میں پکڑ لیا اور ایک ہاتھ کو اپنے ہاتھ سے پکڑ کر اپنے چہرے پر پھیرنا شروع کردیا۔ مگر ابھی تک لوکاٹی کو آنکھیں کھولنے کی اجازت نہیں تھی۔ مگر وہ بہت نزاکت اور پیار کے ساتھ اب اپنے ہاتھ کو ماریہ کے چہرے پر پھیر رہا تھا، وہ کبھی اپنے ہاتھ ماریہ کے نازک اور روئی کے گالوں کی طرح نرم گالوں پر پھیرتا تو کبھی اپنی انگلی ماریہ کے شربتی ہونٹوں پر پھیر کر انکا لمس لیتا۔ پھر ماریہ نے لوکاٹی کو نیچے لیٹ جانے کے لیے کہا تو لوکاٹی آنکھیں بند کیے ہی بیڈ پر لیٹ گیا اور ماریہ اسکے پیٹ کے اوپر آکر بیٹھ گئی مگر لوکاٹی کے ہاتھ ابھی تک ماریہ کے ہاتھوں میں تھے اور اسکی آنکھیں ابھی تک بند تھیں۔ 


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

لوکاٹی جی ہی جی میں سوچ رہا تھا کہ ابھی ماریہ اسکو آنکھیں کھولنے کی اجازت دے اور اسکے ہاتھوں کو آزاد چھوڑ دے تو وہ دل کھول کر ماریہ کو پیار کرے مگر ماریہ کی طرف سے ابھی یہ اجازت نہیں ملی تھی۔ لوکاٹی کو نیچے لٹا کر ماریہ نے ایک بار پھر لوکاٹی کو اپنے ہاتھ سر کے پیچھے باندھنے کو کہا تو لوکاٹی نے کسی فرمانبردار بچے کی طرح اپنے ہاتھ سر کے پیچھے باندھ لیے۔ اب ماریہ نے لوکاٹی کی قمیص کے بٹن کھولنا شروع کیے اور ایک ایک کر کے سارے بٹن کھول کر اسکے سین پر جھک کر پیار کرنے لگی۔ لوکاٹی کو اپنے سینے پر ماریہ کے جوان اور گرم ہونٹوں کا لمس بہت ہی پیارا لگ رہا تھا اسکے ساتھ ساتھ اسے ماریہ کے مموں کا احساس بھی ہو رہا تھا جو اسکے سینے سے ٹکرا رہے تھے۔ کچھ دیر اسی طرح لوکاٹی کو پیار کرنے کے بعد ماریہ نے ایک بار پھر لوکاٹی کے ہاتھوں کو اپنے ہاتھوں میں پکڑ لیا اور دونوں ہاتھوں کو اپنی طرف کھینچ کر اپنی ٹانگوں پر تھائیز کے اوپر رکھ دیا۔ جیسے ہی ماریہ نے لوکاٹی کے ہاتھ اپنی تھائیز پر رکھے تو لوکاٹی کو ایک جھٹکا لگا اور اس نے اپنی آنکھیں بے اختیار کھول دیں۔ جھٹکا لگنے کی وجہ یہ تھی کہ جب ماریہ نے لوکاٹِ کے ہاتھوں کو اپنی تھائیز پر رکھا تو وہاں اسے کسی کپڑے کے ہونے کا احساس نہیں ہوا بلکہ ماریہ کی تھائیز بالکل ننگی تھیں، اور جب لوکاٹی نے آںکھیں کھولیں تو اسکے سامنے ماریہ ایک خوبصورت نائٹی میں ملبوس اسے بہت پیار سے دیکھ رہی تھی


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

ماریہ کو اس حالت میں دیکھ کر ماریہ کی گانڈ کے نیچے موجود لوکاٹی کے لن نے اپنا سر اٹھا لیا اور مکمل طور پر کھڑا ہوکر ماریہ کی چوت میں جانے کی ضد کرنے لگا۔ مگر ماریہ نے اس پر اپنی گانڈ کا دباو ڈال کر اسے نیچے بٹھا دیا اور صبر کرنے کو کہا۔ ماریہ اس وقت ایک ہلکے نیلے رنگ کی جالی دار نائٹی پہنے ہوئی تھی جس میں اسکے کندھے مکمل ننگے تھے محض باریک ڈوریوں کے ذریعے نائٹی اسکے بدن پر رکی ہوئی تھی۔ ماریہ کا برا گہرے نیلے رنگ کا تھا، فوم والا یہ برا انڈر وائیرڈ تھا یعنی اسکے نیچلے حصے میں ایک رنگ ڈلا ہوا تھا جو مموں کو نہ صرف اوپر کی طرف اٹھاتا ہے بلکہ انکو آپس میں جکڑ کر ایکدوسرے کے ساتھ بھی ملاتا ہے جسکی وجہ سے سیکسی کلیویج بنتی ہے اور چھوٹے ممے ہونے کے باوجود اوپر سے دیکھنے میں بڑے لگتے ہیں۔ اور ماریہ کے ممے تو ویسے ہی 36 سائز کے تھے اور اس پر انڈر وائیرڈ برا نے جو مموں کو اٹھایا تو انکی ایسی خوبصورت اور سیکسی شیپ بنی کے کوئی بھی مرد انکو پکڑنے کےلیے بے اختیار اپنے ہاتھ بڑھا دے۔ ماریہ کے بھی دونوں ممے آپس میں مل کر گہری لائن بنا رہے تھے اور انکا ابھار بھی کافی بڑھ گیا تھا جسکی وجہ سے 36 سائز کے ممے اب 38 سائز کے لگ رہے تھے ۔ برا کے اوپر ماریہ کی باریک جالی دار نائتی تھی جو موم بتی کی ہلکی روشنی مین بہت سیکسی لگ رہی تھی ، یہ نائٹی سینے کے اوپر ایک باریک سی ڈوری کے ساتھ بندھی ہوئی تھی جبکہ اسکے نیچے مکمل کھلی تھی جسکی وجہ سے ماریہ کا پتلا اور سیکسی پیٹ بہت ہی خوبصورت لگ رہا تھا۔ ماریہ کی ناف کی ہلکی سی گہرائی اور چھوٹا سا رنگ بہت خوبصور تھا۔ نائٹی ماریہ کے چوتڑوں تک آکر ختم ہوری تھی جبکہ سامنے سے پینٹی تک بھی نہیں آرہی تھی پینٹی کے اوپر ہی ختم ہورہی تھی۔ نیچے ماریہ نے ایک بہت ہی سیکسی نیلے رنگ کی پینٹی پہن رکھی تھی جو سامنے سے محض اسکی چوت کی لائن کو ڈھانپ رہی تھی جبکہ چوت کی لائن کے ساتھ والا حصہ واضح نظر آرہا تھا اور ماریہ کی بالوں سے پاک نرم و ملائم ٹانگیں اور گوشت سے بھری ہوئی تھائیز بھی بہت سیکسی لگ رہی تھی۔ 


RE: وطن کا سپاہی - Story Maker - 17-06-2016

لوکاٹی کو اپنی قسمت پر یقین نہیں آرہا تھا کہ وہ اتنی خوبصورت اور سیکسی لڑکی کی آج چدائی کرنے والا ہے۔ وہ بلا اختیار اٹھ کر بیٹھ گیا تھا اور ماریہ اب اسکی گود میں تھی، اٹھ کر بیٹھتے ہی لوکاٹی نے اپنے ہاتھ ماریہ کی پتلی کمر کے گرد لپیٹ لیے تھے جس پر ایک باریک نائٹی موجود تھی جبکہ اسکے ہونٹ ماریہ کے مموں کے ابھاروں پر کلیویج لائن میں پیار کر رہے تھے۔ لوکاٹی اپنی زبان نکال کر مموں کے درمیان ملاپ سے بننے والی لائن کی گہرائی میں اتار رہا تھا مگر اسکی زبان اتنی لمبی نہیں تھی کہ وہ ماریہ کے مموں کی لائن کی گہرائی تک جا سکے۔ کچھ دیر تک وہ اسی طرح ماریہ کی کمر پر ہاتھ رکھے اسکے مموں کے ابھاروں پر پیار کرتا رہا پھر اس نے ماریہ کو بیڈ پر لٹا لیا اور خود ماریہ کے اوپر آکر ماریہ کے دونوں مموں کو اپنے ہاتھ میں پکڑ کر دبانا شروع کر دیا۔ ماریہ نے اپنی زبان باہر نکال کر اپنے ہونٹوں پر پھیرنی شروع کر دی جس سے لوکاٹی کی خواری میں اور بھی اضافہ ہوگیا اور وہ ایک بار پھر سے ماریہ کے اوپر جھک کر اسکے مموں کی لائن میں زبان پھیرنے لگا۔ کچھ دیر اسی طرح پیار کرنے کے بعد لوکاٹی کچھ نیچے آیا اور اسکے پیٹ پر اپنے ہونتوں سے پیار کرنے لگا۔ پیٹ سے پیار کرتے کرتے وہ نیچے کی طرف آرہا تھا اور ماریہ کی خوبصورت ناف میں اپنی زبان پھیرنی شروع کر دی جس سے ماریہ کا پیٹ تھر تھر کانپنے لگا تھا



Online porn video at mobile phone


hot sexy aunties picsfake nude wallpaperandhra housewifessexmadhurimalayalamtamil aunty exbiitamil sec storyincest text chatwife pimpedsec storyslactating dreams.comtamil sex story tamil languageSamabhag story marathi languge.comanalfuckvideotollywood nudmalayalam sex kadhaindiangilmalactating sex storiesகாமமோகினி கதைகள்exbii gujaratisxe storigand aur chootdexy storiesdesi story hindiPaise ki kami ki waja se jisam ko bacha sexy kahaniyanவிஜ்ய் நன்பன் பூல்hindi font sex kahanitamil sex story in tamil pdfmaza balatkar zala marathi storytamil sex story in tamil fontnude bollywood beautiesindian hijra picsgay lund storiescartoon incetkajal agarwal fuckingshakeela hot picKaankh chatna hindi sex Xossiptarak mehta ka ulata chashmahot sexy aunty imagesexy stories in tamil fontwww.telugu kathalu.commami ki chudai hindi sex storyhindi sex stories urdu sex storiesshakeela sex fullsexy stores urdupakistani sex mms scandalsmallu aunty bluekannda sex storyhindi sex kahani 2013moti gand photoanna swan largest vaginahindi boobs sexsexy bhabhi story hindihot sexi pixpadosan ki chusaxy khaniangelica deviwww.desi babs.comsweetpussy picgand kasakshi tanwar nudeanni tamil sex storiesdesi hindi urdu sex storydirty sex kahaniyabehan ki gaandmaa ke gandhindi font stories chudailatest telugu storieskushbu pundaihindisex story in hindiwegina imagehindi antervasana storiesexbii aunty sexlatest malayalam sexwww.kashmir sex.comhindi gang rape storiestamil ponnu sexsex story hindi bhabhinedu mujrawww.desi rupa.comexbii sexy desisavitha bhabhi the partysex comics in hindi onlinesex stories in telugu lipisex hindi kahaniyanmalayalam erotic novelsandhya auntyChennai local Unnati sawing her boobs Photos really randyurdu sexi kahania